• صارفین کی تعداد :
  • 1824
  • 3/24/2012
  • تاريخ :

رسول خدا سے اميرالمۆمنين کي قربت کے پہلو 4

امام علی

رسول خدا سے اميرالمۆمنين کي قربت کے پہلو1

رسول خدا سے اميرالمۆمنين کي قربت کے پہلو2

رسول خدا سے اميرالمۆمنين کي قربت کے پہلو3

... تيسرے روز جب ابولہب نے شور مچاکر مجلس کو درہم برہم کي کوشش کي تو مۆمن قريش حضرت ابوطالب عليہ السلام نے چل کر فرمايا: خاموش ہوجاۆ ابولہب! اور ابولہب بے حرکت ہوکر رہ گيا تو رسول اکرم صلي اللہ عليہ وآلہ  و سلم نے اٹھ کر اور دعوت اسلام دينے کے بعد فرمايا: "مَن يُۆارزني علي هذا الامرِ يَكن اخي و وصييي و وزيري و وارثي خليفتي مِن بعدي"؛ (4) کون ہے جو اس امر نبوت ميں ميرا بازو بنے اور ميرا خليفہ، ميرا بھائي، ميرا وزير و مددگار، اور ميرا وارث ميرے بعد ميرا خليفہ بنے؟ اور علي عليہ السلام نے اٹھ کر رسول اللہ صلي اللہ عليہ و آلہ و سلم کي مدد و حمايت کا اعلان کيا اور رسول اللہ صلي اللہ عليہ و آلہ و سلم نے آپ (ع) کو اسي دن اپنا بھائي، جانشين اور وزير اپنے بعد خليفہ قرار ديا اور فرمايا: ميرے بعد ان کے حکم عدولي نہ کرنا-  (5) اسي رو سے پيغمبر اعظم صلي اللہ عليہ و آلہ و سلم نے اعلاناً اور عملاً ـ ايسے انداز سے کہ حجت سب پر تمام ہوجائے ـ اعلان کيا کہ: "تم ميں سے سب سے پہلے مسلم اول علي ابن ابي طالب حوض کوثر کے کنارے مجھ سے آملے گا"- (6)

حضرت اميرالمۆمنين عليہ السلام کا يہي اعزاز ہي کافي ہے کہ آپ (ع) مسلم اول ہيں اور رسول اکرم صلي اللہ عليہ و آلہ و سلم کي بعثت کے فوراً بعد اور اعلانيہ دعوت سے بہت پہلے آپ صلي اللہ عليہ و آلہ و سلم پر ايمان لائے ہيں اور ...

-----------

مآخذ

4ـ تـاريخ طبـرى ج2 , ص 62و63 و تـاريخ كـامل ابن اثير ج2 , ص 41و42- تاريخ ابن کثير ج 2 ص 217-

5- تفسير طبري ج19 ص 74-

6ـ ابن عبدالبرّ القرطبي، الاستيعاب في معرفة الاصحاب، ج 3، ص 28.