• صارفین کی تعداد :
  • 6507
  • 6/29/2013
  • تاريخ :

سيد محمود گلابدرہ  ايک اہم ادبي شخصيت

سید محمود گلابدرہ ای ایک اہم ادبی شخصیت

مرحوم گلابدرہ اي  کے حالات زندگي (حصّہ اوّل )

 انقلاب کے زمانے ميں انقلابي سرگرميوں کو  تحرير کيا اور اس دور ميں پيش آنے والے واقعات کو ناول کي صورت ميں لکھا -  ان داستانوں کو  ميں نے سن 1358 ہجري شمسي ميں شائع کيا -انقلاب سے قبل بھي ميري چار کتابيں بنام سگ کوره پز، اباذر نجار، پر کاه اور ايک روسي مصنفين کا ترجمہ شدہ  مجموعہ شائع ہو چکے تھے  - سن  1362 ہجري شمسي  کو سويڈن چلا گيا اور اس کے بعد وہاں آنے جانے کا سلسلہ جاري رہا - ايران اور عراق کے درميان ہونے والي دس سالہ جنگ کے دوران ميں نے جنگ ميں حصّہ ليا اور اپنے وطن کي حفاظت کے ليۓ ميدان  جنگ ميں سرگرم رہا -  جنگ کے دوران بھي  ميں نے جنگ کے متعلق چار داستانيں تحرير کيں -

 اب ميري عمر 67 سال  ہے مگر ميں ابھي تک لکھتا ہوں - زندگي کے تمام پہلوۆں ميں بڑي دلچسپي ليتا ہوں - اپني جسماني صحت کو متوازن رکھنے کے ليۓ ابھي تک کوہ پيمائي کرتا ہوں - ماضي ميں  ہندوستان اور نيپال ميں واقع کوہ ہماليہ پہاڑوں پر گيا ہوں - اس کے علاوہ يورپ اور امريکہ کے معروف پہاڑي سلسلوں  پر بھي گيا ہوں -  ان دنوں ميں تنہائي کي زندگي گزار رہا ہوں - بعض اوقات کتاب کو چھپوانے کے ليۓ دے ديتا ہوں اور بعض کتابوں کو شائع نہيں کرتا ہوں - ميرے 9 ناول  شائع نہيں ہوۓ ہيں  اور ان ميں سے ايک ناول بہت لمبا ہے جسے ابھي تک مکمل کر رہا ہوں - اس ناول کو ميں نے سن 1341 ہجري شمسي ميں شروع کيا تھا مگر بعض وجوہات کي بنا پر ابھي تک يہ ناول نامکمل ہے - ميں اس عمر ميں لکھتا ہوں اور ميرا دل کرتا ہے کہ مجھ سے جتنا بھي ہو سکے لکھتا رہوں - بہت ساري داستانوں کو پورا کرنا چاہتا ہوں مگر بڑھاپا  ، مجبورياں اور ميري آوارگي ميري چاہت کي راہ ميں حائل ہو رہي ہے - ميں نے اپني ساري زندگي محنت اور مشقت کو اپناۓ رکھا ہے - بچپن سے مجھے کام کرنے کي عادت ہے -  جب ميں سکول ميں تھا اس وقت بھي گرميوں کي چھٹيوں ميں کام کاج کرکے   اپنے  ليۓ کئي مہينوں کا پيسہ کما ليتا تھا - اس وقت بوڑھا ہو چکا ہوں مگر پھر بھي خود کو فعال رکھا ہوا ہے - ميرے دو بيٹے اور دو پوتے مجھ سے دور رہتے ہيں جن کي دوري کي وجہ سے کبھي کبھار ميں غمزدہ ہو جاتا ہوں - ميري 28 کتب  چھپ چکي ہيں اور 8 سے 9 کتابيں ابھي چھپنا باقي ہيں - ميں اس اميد کے ساتھ خوشي کا احساس کرتا ہوں کہ ميري  تحريروں سے دوسروں کو فائدہ پہنچتا ہے -  

سيد محمود گلابدرہ اي نے فارسي ادب کے ليۓ خاطر خواہ کام کيا اور خود کو ايران کي ايک اہم ادبي شخصيت کے  طور پر منوايا - اب وہ اس دنيا ميں نہيں رہے مگر ان کي تحريريں اب بھي ان کي ياد تازہ کر رہي ہيں - ( ختم شد )

شعبۂ تحریر و پیشکش تبیان


متعلقہ تحریریں:

رومي کے حالات زندگي

وحشي بافقي يزدي