• صارفین کی تعداد :
  • 1658
  • 3/23/2012
  • تاريخ :

حديث غدير اميرالمۆمنين (ع) کي نگاہ ميں 13

علي (ع)

حديث غدير اميرالمۆمنين (ع) کي نگاہ ميں 9

حديث غدير اميرالمۆمنين (ع) کي نگاہ ميں 10

حديث غدير اميرالمۆمنين (ع) کي نگاہ ميں 11

حديث غدير اميرالمۆمنين (ع) کي نگاہ ميں 12

بقلم محمد محمديان تبريزى

اس بات پر کہ "ميں ہي ولي امر ہوں، نہ کہ دوسرے قريشي"، ميري دليل وحجت يہ ہے کہ: ولايت اس شخص کا حق ہے جس نے آزاد کيا ہو- پس رسول اللہ صلي اللہ عليہ و آلہ و سلم نے لوگوں کو جہنم کي آگ سے آزاد کيا اس امت کي ولايت رسول اللہ (ص) کے لئے ہے، رسول اللہ (ص) کے بعد وہي ولايت ميرے لئے ہے کيونکہ اگر قريش کو امت پر کوئي فضيلت حاصل ہے رسول اللہ (ص) کي وجہ سے ہے [اور اس معيار کے مطابق] بنوہاشم کو اسي بنا پر قريش کے مقابلے ميں زيادہ صريح و آشکار ہے امو مجھے بنو ہاشم پر وہي فضيلت حاصل ہے کيونکہ رسول اللہ (ص) غدير کے دن فرمايا: "من كنت مولاه فهذا على مولاه"؛ مگر يہ کہ قريش دعوي کريں کہ رسول اللہ کي قرابت کے سوا کسي اور دليل کي بنياد پر امت پر برتري رکھتے ہيں- پس اگر وہ ايسي کوئي بات کرنا چاہيں تو کرتے رہيں...

يہ جناب "محمد محمديان تبريزى" کے مفصل مقالے "واقعۂ غدير اميرالمۆمنين عليہ السلام کي نگاہ ميں" کا اختتامي حصہ ہے - مقالہ مفصل تھا اور تبيان کے اپنے خاص تقاضوں کي بنا پر اس کو آٹھ حصوں ["حديث غدير مسجدالنبي (ص) ميں، حديث غدير خطبہ وسيلہ ميں، حديث غدير چھ رکني شوري اور عثمان کے دور ميں، حديث غدير جمل و صفين ميں، حديث غدير شہر کوفہ  ميں، حديث غدير ميدان کوفہ ميں، حديث غدير جنگ نہروان کے بعد اور حديث غدير اميرالمۆمنين (ع) کے زباني / حوالہ جات"] ميں تقسيم کيا گيا- ان حصوں ميں اہم ترين حوالے واضح کئے گئے اور اس شبہے کا جواب ديا گيا کہ "اميرالمۆمنين (ع) نے کبھي بھي حديث غدير کا حوالہ دے کر اپني حقانيت ثابت کرنے کي کوشش نہيں کي ہے-

بحث کو مکمل کرنے کي غرض سے يہاں ان ديگر منابع کي فہرست بھي پيش کي جاتي ہے جن کے ضمن ميں اميرالمۆمنين عليہ السلام نے حديث غدير سے استناد فرمايا ہے-

-------------

منبں مجله كوثر شماره 2